تبلیغی چھ نمبروں کی اہمیت اور ضرورت

اردو میں چھ صفت Urdu

مقدمہ

 

 

صحابہ رضی ع ه ہ  ميں بہت همده خوبياں تمی، ه ماء  ے اس ميں سے چ د خوبياں چن کر

جمع کی ہيں جس پر همل کر ے سے ہمارے لئے پورےدين پر چ  ا آسان ہو جائے گا۔

۱) ايمان:

ال الہ اال للا

مقصد اس کا يہ ہے کہ ہمارے دل کا يقين صحيح ہو جائے، کہ کسی سے کچم  ہيں ہوتا سب

کچم ايک ع ہی سے ہوتا ہے۔

فضي ت : حضرت معاذ بن جبل رضی ع ه ہ فرماتے ہيں: رسول ع ص ی ع ه يہ وس    ے

فرمايا: مرتے وقت جس  ے يہ ک مہ پڑها وه ج ت ميں داخل ہو گا۔

صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ: ميں چل پمر کر کامل ايمان کی دهوت ديں اس سے ہٹ کر ع سے ہو ے کو ما يں امت اسباب

اور خوب دهاء کريں

محمد رسول للا صىل للا علیہ وسلم اس بات کا يقين ہمارے دلوں ميں آجائے کہ کاميابی صرف اور صرف رسول ع ص ی وس   کے طريقوں  پر ہے، اسکے هالوه جت ے طريقے ہيں وه سب  اکاميابی اور تباہی مقصد: ع ه يہ

کی طرف لے جا ے والے ہيں۔

فضي ت: حضرت ابو ہريره رضی ع ه ہ  قل کرتے ہيں کہ رسول ع ص ی ع ه يہ وس    ے

فرمايا: جو شخص ايسے وقت ميں ميری س ت پر همل کرے گا جب کہ لوگ بری حالت ميں

ہو گے اس شخص کو سو شہيدوں کے برابر ثواب م ے گا۔

صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ: ميں چل پمر کر اس کی دهوت ديں اس امت

روزا ہ ايک س ت  کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کی کوشش کريں

 

 

 

 

 

ت  ماز پيدا ہوجائے

اور خوب دها کريں

۲) ماز

مقصد:  ماز سے يہ چاہا جارہا ہے کہ ہمارے ا در صفا

 

ت: حضرت جابر رضی ع ه ہ  فرماتے ہيں کہ ا ہوں  ے  بی ص ی ع ه يہ وس   سے ہوئے کہ پا چ وقت  کی  ماز پڑه ے والے کی مثال ايسی ہے جيسے کسی کے گمر فضي س ا فرماتے

کے سام ے چموٹی  دی ہےاور وه اسميں دن بمر ميں پا چ مرتبہ غسل کرتا ہو۔

اس صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ:

 

 

تما   مازوں

خوب  فل  ماز پڑه ے کا اہتما  کريں تاکہ خشوع اور خضوع پيدا ہو جائے۔ اور

کو مسجد ميں با جماهت تکبي ِراولی کے ساتم پڑه ے کی کوشش کريں۔

۳)ه  وذکر

  ه

مقصد: جس حال ميں بمی ہ  ہوں ع ہ  سے کيا چاہتا ہے يہ جا  ا

 

 

ت: حضرت ابو درداء رضی ع ه ہ فرماتے ہيں کہ ميں  ے رسول ع ص ی ع ه يہ وس   ہوئے س ا کہ جو بمی ه   کی تالش ميں چ تا ہے ع اسکے لئے ج ت کے راستے فضي ہے۔ اور فرشتے طالب ه   کے لئے اپ ے پر پميالتے ہيں اس کے اس فعل کو فرماتے پر چ  ا  آسان فرماتا

سے راضی ہوکر۔ بيشک آسمان والے اور زمين والے حتی کہ سم در کی مچم ياں سب هال

لئے دها ِء مغفرت کرتے ہيں۔  اور ايک هال کی فضي ت ايک هابد پر چا د کی باقی تما پر فضي ت کی طرح ہے۔  بيشک  ه ماء ا بياءکے وارث ہيں اور ا بياء    ے دي ار اور کے ميں  ہيں چموڑے، ا ہوں  ے  صرف ه   اپ ی وراثت ميں چموڑا ہے، اور ستاروں درہ  اپ ی وراثت

جس  ے يہ اپ ے حصے ميں پايا اس  ے بہت کچم اپ ے حصے ميں پايا۔ (ابو داود)

صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ: ميں چل پمر کر اس کی دهوت ديں اس امت

ه ماء کے پاس جاکر مسائل کا ه   حاصل کريں اور تع ي  ميں بيٹم کر فضائل س يں

خوب دهاء کريں

ذکر

مقصد: ہ  ہر وقت ع کو ياد کر ے والے بن جائے

 

فضي ت: حضرت ابو موسی االشعری رضی ع ه ہ روايت کرتے ہيں کہ رسول ع ص ی ع

 

کو ياد  ہ کرتا ہو

ه يہ وس    ےفرمايا: اس شخص کی مثال جو ع کو ياکرتا ہو  اور جو ع

ا کی مثال ز ده اور مرده کی طرح ہے

صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ: ميں چل پمر کر اس کی دهوت ديں اس امت

 

حافظ روزا ہ ايک پاره پڑهيں اور جو حافظ ہو وه روزا ہ تين پارے پڑهيں۔ اور تين غير

 

دهاؤں کا

اور بعد مين مس ون

تسبيحات صبح وشا  پاب دی سے پڑهيں اور ہر کا  سے پہ ے

اہتما  کريں خوب دهاء کريں

 

۴) اکرا ِ  مس

 

اپ ے مس مان بمائيوں سے ہمدردی کا معام ہ کريں ابو ہريره رضی ع ه ہ    سے مروی ہے کہ  بی ص ی ع ه يہ وس    ے ہ حضرت

مقصد:

فضي ت:

 

فرمايا:  جو شخص کسی مؤمن سے اس د يا ميں کوئی پريشا ی دور کرتا ہے ع قيامت کے دن

پريشا يوں ميں سے ايک پريشا ی اس سے دور کرے گا۔ اور جو کسی ت گ دست پر آسا ی ع اس پر د يا اور آخرت ميں آسا ی پيدا کرےگا۔ اور جو کسی مس مان کے هيب کو کی هيوب  کو د يا اور آخرت ميں چمپائے گا۔ ع ب دے کی مدد ميں رہتا ہے کرتا ہے چمپائے گا ع اسکے

جبتک کہ وه اپ ے بمائی کی مدد ميں رہتا ہے۔

صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ: ميں چل پمر کر اسکی دهوت ديں اس امت

ے تو دوسروں کے حقوق کو اداء کريں۔ دوسری بات يہ ہے کہ دوسرے کے حق کو اپ ے ديں۔ اور تيسری بات يہ کہ اپ ے بمائی کے حق کے لئے اپ ا حق چموڑ ديں پہ پر ترجيح

خوب دهاء کريں

۵) اخالص

مقصد: ز دگی کے ہر همل کو ع کی رضام دی ہی کے لئے کر ا

 

فضي ت: امير المؤم ين همر بن الخطاب رضی ع ه ہ سے مروی ہے کہ ميں  ے رسول ع

ع ه يہ وس   کو فرماتے ہوئے س ا:  ہر همل کو  يت سے پرکما جائے گا اور ہر آدمی ص ی

کو اسکی بيت کے برابر م ے گا۔

صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ: ميں چل پمر کر اسکی دهوت ديں اس امت

همل کے شروع بيچ اور آخر ميں اس بات کا خيال رکم ا ہے کہ جو بمی همل ہ  کررہے ہر

ہيں صرف اور صرف ع ہی کے لئے کر رہے ہيں۔

۶)دهوت وتب يغ

 

تما  ا سا وں کی ز دگی ميں مکمل دين آجائے اور اسکے ا جا  دي ے کے لئے ہ  ايسی کريں کہ دين کا معيار واپس ويسا ہو جائے جيسا  بی ص ی ع ه يہ وس   چموڑ کر گئے مقصد: مح ت

تمے

فضي ت:  حضرت ا س رضی ع ه ہ سے مروی ہے کہ رسول ع ص ی ع ه يہ وس    ے

فرمايا: ع کے راستے ميں صبح يا شا  کو گزار ا د يا وما فيہا سے بہتر ہے۔

صفت کو اپ ی ز دگی ميں ال ے کا طريقہ: ميں چل پمر کر اسکی دهوت ديں اس امت

ہر سال چار مہي ے، مہي ے ميں دس دن اور روزا ہ ۸ گم ٹے ع کے راستے ميں لگائيں۔

 

بستی کا گشت، پڑوس کی بستی کا گشت،

اور پا چ اهمال ميں شريک ہو: مسجد کا مشوره،

مسجد کی تع ي  اور گمر کی تع ي ۔

خوب دهاء کريں۔

 

اس کتاب میں تبلیغ کی 6 خصوصیات کے مندرجہ ذیل زبانوں میں ترجمہ شامل ہیں۔

 

 

 

انگریزی
فرانسیسی
پرتگالی
ہسپانوی
ترکی
مقدونیائی
البانی
روسی
افریقی
زولو
سوانا
چیچوا
اورومو
سواحلی
انڈونیشی
فلپائن
مالائی
تھائی
مینڈارن
گجراتی
بنگلہ
اردو
عربی